کیا اُستاد ایسے ہوتے ہیں؟ سعودی خاتون ٹیچر کی ویڈیو منظر عام پر آگئی

ریاض(کائنات نیوز) سعودی خاتون ٹیچر کی شرمناک ویڈیو منظر عام پر آگئی، سعودی عرب دُنیا بھر میں مسلمانوں کے لیے مقدس ترین سرزمین کی حیثیت رکھتی ہے۔ خصوصاً حجاز مقدس کے خطے میں بیت اللہ اور مسجدِ نبوی بھی واقع ہے۔ اس کے علاوہ بھی تاریخ اسلام سے جُڑے سینکڑوں مقدس مقامات بھی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ سعودی مملکت میں فحاشی و عریانی اور دیگر لغویات سے سختی سے نمٹا جاتا ہے۔

تاہم گزشتہ کچھ عرصے سے سعودی مملکت میں ایسے شرمناک واقعات پیش آ رہے ہیں جن کے باعث اُمتِ مُسلمہ کے دِل بہت دُکھ کی حالت میں ہیں۔سعودی سوشل میڈیا اسٹار اور خاتون ٹیچر ہند القحطانی کی وائرل ویڈیو نے سعودی عوام کو شدید غم و غصے میں مبتلا کر دیا۔ سعودی اخبار المرصد کے مطابق اپنی بے باک حرکات اور متنازعہ بیانات کی وجہ سے ماضی میں بھی تنقید کا نشانہ بننے والی سعودی خاتون ہند القحطانی کی ایک تازہ ویڈیو سامنے آئی ہے جس میں وہ نامناسب لباس میں جذبات کو مشتعل کرنے والا شرمناک رقص کرتی دکھائی دے رہی ہے۔ہند القحطانی اس ویڈیو کلپ میں اپنے گھر پر موجود ہے، جس میں یمنی گلوکار فواد عبدالواحد کے گزشتہ فروری میں لانچ ہونے والے مشہور گانے پر بیہودہ رقص کرتی دکھائی دے رہی ہے، اس دوران اس کے جسم کا کچھ حصہ کپڑوں سے محروم دکھائی دے رہا ہے۔ اس ویڈیو میں اس کی بیٹا بھی دکھائی دیتا ہے۔ہند القحطانی کی جانب سے اپنی یہ بیہودہ ویڈیو سنیپ چیٹ کے اکائونٹ سے پوسٹ کرنے کی دیر تھی کہ چند منٹوں ہی یہ وائرل ہو گئی۔سعودی سوشل میڈیا صارفین نے ہند القحطانی کو اس کے شرمناک رقص اور نامکمل لباس پر شدید تنقید کا نشانہ بھی بنایا۔ ہند القحطانی ماضی میں بھی اس طرح کی نامناسب حرکات کر کے سعودی عوام کی ناراضگی مول لے چکی ہے۔

سعودی عرب میں پیدا ہونے اور پرورش پانے والی ہند ریاض میں آٹھ سال تک انگریزی کی تعلیم دیتی رہی ہے۔ پچھلے کچھ سالوں سے وہ سعودی عرب میں اپنی دو بیٹیوں اور دو بیٹوں کے ساتھ مقیم ہے۔ اس سے قبل نوجوان سوشل میڈیااسٹار خاتون ٹیچر فوز العُتیبی نے 29 جنوری کواپنی ایک انتہائی شرمناک ویڈیو پوسٹ کی ہے جس میں وہ ایک مشہور ثقافتی مقام پر اپنے خاوند کے ساتھ سر عام بوس و کنار میں مصروف ہے اس موقع پر اس  خاتون ٹیچر نے سفید رنگ کا ایسا فراک پہن رکھا ہے جس میں اُس کا جسم عریانی کی حدوں کو چھو رہا ہے۔جہاں ایک قدیم دور کی بلڈنگ کے تہہ خانے میں بنی سیڑھیوں سے نیچے اُتر رہی ہے۔اس ویڈیو میں بھی اس نے وہی مختصر سا فراک پہن رکھا ہے جو اُس کے گھنٹوں سے بھی اُوپر ہے۔ فوز العتیبی بڑے باک انداز میں اس عمارت کے تہہ خانے میں داخل ہو کر وہاں بنے ایک کنوئیں کے پاس جاتی ہے۔ اس کا انداز رقص اور جھُومنے جیسا ہوتا ہے جس کے باعث اُس کا مختصر لباس اُس کے جسم کو ڈھانپنے میں ناکام دکھائی دیتا ہے۔ اس انتہائی بے حیا ئی سے بھرپور ویڈیو پر سوشل میڈیا صارفین بھڑک اُٹھے۔یہاں تک کہ اُس کے مداح نے بھی فوز العتیبی کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کر ڈالا ہے۔ کیونکہ فوز العتیبی کی یہ حرکات سعودی عرب کے روایتی اور اسلام پسند سماج کے عین منافی ہیں۔

فوز نے اپنے خاوند کے ساتھ چمٹنے اور بوسے بازی کی تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا ہے کہ میرے کئی مداح میری ٹویٹر سے غیر حاضری پر دُکھی تھے اور مجھ سے اس خواہش کا اظہار کر رہے تھے کہ میں دوبارہ اپنی فوٹوز شیئر کروں۔ سو میں ایسا کر رہی ہوں۔ لیکن اگر میری ان تصویروں پر مجھے تنقید کا نشانہ بنایا گیا تو میں ایک بار پھر لمبے عرصے کے لیے سوشل میڈیا سے غائب رہنے کو ہی بہتر خیال کروں گی۔

Comments are closed.