13 سالہ لڑکی سے 48 سالہ بندے کی شادی پھر کیا ہوا جانیں

تازہ خبر 92! 48 سال کے شخص نے 13 سال کی لڑکی سے کی شادی ، پھر ہوا کچھ ایسا ، سبھی رہ گئے حیرانفلیپینز (Philippines) میں 48 سال کے ایک شخص نے 13 سال کی لڑکی سے شادی کی ہے ۔ دلہن اس شخص کے بچوں کی عمر کی ہے ۔ یہ شادی زبردستی کرائی گئی ہے ۔ انٹرنیشنل میڈیا میں اس شادی کی کافی تنقید کی جارہی ھے

فلیپینز میں 48 سال کے ایک شخص نے 13 سال کی لڑکی سے شادی کی ہے ۔ دلہن اس شخص کے بچوں کی عمر کی ہے ۔ یہ شادی زبردستی کرائی گئی ہے ۔ انٹرنیشنل میڈیا میں اس شادی کی کافی تنقید کی جارہی ہے ۔ اب اس 13 سال کی لڑکی کو 48 سال کے شخص کے بچوں کی دیکھ بھال کرنی ہوگی جو خود اسی ک عمر کے ہیں

شادی کی تصاویر دیکھنے سے ہی پتہ چلتا ہے کہ گزشتہ ماہ ایک 13 سال کی لڑکی کو فلیپینز کے مماساپانو شہر میں ایک 48 سال کے شخص سے شادی کرنے کیلئے مجبور کیا گیا تھا شادی کے ایک دن کے پروگرام کے بعد وہ شوہر کی پانچویں بیوی بن گئی ۔ 22 اکتوبر کو ہوئے اس پروگرام میں لڑکی نے سفید رنگ کی ڈریس پہن رکھی تھی ۔ خیال رہے کہ فلیپینز میں سات لاکھ 26 ہزار بچہ دلہن ہیں ، جو اس معاملہ میں دنیا کا بارہواں سب سے بڑا ملک ہے ۔

حالانکہ جب شادی کے بارے میں لڑکی سے پوچھا گیا تو اس نے زور دیا کہ وہ شوہر سے نہیں ڈرتی ہے ، کیونکہ وہ اس کے ساتھ اچھا سلوک کرتا ہے ۔ اس نے کہا کہ میں سیکھ رہی ہوں کہ کیسے کھانا بنانا ہے ، کیونکہ میں ابھی اسے اچھی طریقہ سے نہیں جانتی ہوں ۔ میں اپنے شوہر کو خوش کرنا چاہتی ہوں ۔ شادی کرنے کے تین ہفتے بعد اس کے شوہر نے ساتھ رہنے کیلئے ایک چھوٹا سا گھر بنایا ہے ۔

وہیں لڑکی کا شوہرعبد الرزاق ایک کسان ہے جبکہ لڑکی گھر کا کام کاج سنبھالتی ہے اور بچوں کی دیکھ بھال کرتی ہے ، جو کہ اسکی دوسری شادیوں سے پیدا ہوئے ہیں ۔اس جوڑے نے کہا کہ جب لڑکی 20 سال کی ہوجائے گی تب وہ بچہ پیدا کریں گے ۔ عبد الرزاق کہتے ہیں کہ میں اس کے اسکول کیلئے پیسے دوں گا کیونکہ میں چاہتا ہوں کہ وہ بچہ پیدا کرنے کیلئے صحیح وقت کا انتظار کرتے ہوئے تعلیم حاصل کرے ۔

Comments are closed.