کتا اپنےمرے ہوئے مالک کے ساتھ کیا کرتا رہا

این این ایس نیوز:کہا جاتا ہے کہ محبت کی زبان صرف جانور ہی نہیں‌سمجھتا بلکہ جانور بھی اس زبان کو بخوبی سمجھتے ہیں‌اور محبت کرنے والوں‌سے انہیں‌بھی انسیت ہو جاتی ہے . کہا جاتا ہے کہ کتا سب سے وفادار جانور ہے جو روکھی سوکھی کھا کر بھی اپنے مالک کے در پر پڑا رہتا ہے اور بھگانے سے بھی نہیں‌جاتا . مار اور ڈانٹ ڈپٹ سن لیتا ہے لیکن وفاداری میں‌کمی نہیں‌آنے دیتا .

ایک ایسا کتا بھی ہے جو 11سال سے مسلسل ہر رات اپنے مالک کی قبر پر پہرہ دے رہا ہے۔ ارجنٹائن کے ایک قصبے کے رہائشی میگوائل گزمان کو یہ کتا اس کے 13سالہ بیٹے نے تحفے کے طور پر دیا تھا۔میگوائل گزمان کی وفات کے بعد اچانک ایک دن اس کا کتاجس کا نام کپتان رکھا گیا تھا غائب پایا گیا۔ گزمان کے بیٹے نے کپتان کیگمشدگی کے بعد سوچا کہ شاید وہ اس کے باپ میگوائل گزمان کی وفات کے بعد دلبرداشتہ ہو کر بھاگ گیا ہے مگر کچھ ماہ پہلے میگوائل گزمان کی قبر جس قبرستان میں واقع ہے وہاں کے گورکنوں اور انتظامیہ نے دیکھا کہ ایک کتا میگوائل گزمان کی قبر کے گرد ٹہلتا رہتا ہے۔ وہ ہر روز دن کو غائب رہنے کے بعد رات کے وقت میگوائل گزمان کی قبر پر آن پہنچتا ہے اور رات بھر وہیں رہتا ہے۔ قبرستان کے قریب پھولوں کی دکان کا مالک اپنے مالک کی یاد میں اداس اس کتے کو روزانہ دودھ پلاتا ہے اور یوں کپتان اب اس قبرستان سے اپنے مالک کی وجہ سے منسوب ہوتا جا رہا ہے۔ میگوائل گزمان کے بیٹے نے جب کپتان کو اپنے باپ کی قبر کے پاس پہلی بار دیکھا تو وہ اسے دیکھ کر حیران رہ گیا ، گزمان کا بیٹا اسے واپس گھر لایا مگر شاید کپتان فیصلہ کر چکا ہے کہ وہ اپنی باقی ساری زندگی اپنے مالک کی قبر کے اردگرد ہی رہ کر گزارے گا ، کپتان نے گزمان کے بیٹے کے گھر لانے کے بعد پھر اچانک غائب ہو گیا اور قبرستان میں میگوائل گزمان کی قبر پر دوبارہ پہرہ دیتے دیکھا گیا۔
یہ سلسلہ کافی سال تک چلتا رہا لیکن اس کے بیٹےنے محسوس کیا کہ کتا بیمار رہنے لگا ہے تو اس نےاسے جانوروں کے ڈاکٹر کو دکھایا . ڈاکٹر نے تفصیلی معائنہ کے بعد کہا کہ اس کے گردے ختم ہو چکے ہیں‌اور کچھ دن کا مہمان ہے . ڈاکٹر کا کہنا درست ہوا اور کتا کچھ دن بعد ہی مر دیا . جس کو اس کے محبوب مالک کے پہلو میں‌دفن کیا گیا

Sharing is caring!

Comments are closed.