بہت نوکری کرلی اب گھر جاؤ حکومت کا لاکھوں سرکاری ملازمین کو ریٹائرکرنے کافیصلہ نئی پنشن سکیم کا اطلاق کب سے ہوگا؟جانیے

این این ایس نیوز! سندھ حکومت نے سرکاری ملازمین کی جلدریٹائرمنٹ کا فیصلہ کیا ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی زیر صدارت صوبایی کابینہ کا اجلاس ہوا۔سندھ کابینہ نے پنشن بل کو کنٹرول کرنے کے اقدامات پر غور کیا۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ موجودہ طریقہ کار چلتا رہا تو 10 سال بعد پنشن بل سیلری بل سے

بڑھ جائیں گے۔سندھحکومت کے ملازمین کی تعداد 4 لاکھ 93 ہزار 182 ہے۔سندھ حکومت کے ملازمین لگ بھگ 24 ارب روپے ماہانہ تنخواہ لیتے ہیں۔سندھ حکومت کا ماہوار پنشن بل 13 ارب 30 کروڑ روپے ہے۔ہمیں ایسی اصلاحات کرنا ہیں تاکہ پنشن بل کم سے کم ہو۔موجودہ طریقہ کار چلتا رہا تو10 سال بعد پنشن بل سیلری بل سے بڑھ جائے گا۔سندھ حکومت نے سرکاری ملازمین کی جلد ریٹائرمنٹ کا فیصلہ کیا ہے۔ریٹائرمنٹ کے لیے کم سے کم سروس 25 اور زیادہ سے زیادہ 55 سال مقرر کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔پنشن آخری لی گئی تنخواہ کے بجائے تین سال کی اوسط تنخواہ کے حساب سےدینے کی تجویز پیش کی گئی ہے۔کابینہ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہےکہ نئی پنشن اسکیم کا اطلاق نئی بھرتیوں پر ہو گا۔سندھ کابینہ نے پنشن اصلاحات کی اصولیمنطوری دے دی۔دوسری جانب گذشتہ روز سندھ کابینہ نے کورونا ویکسینیشن نہ کرانے والے سرکاری ملازمین کی تنخواہ بند کرنے کی ہدایت کی تھی۔ق وزیراعلیٰ سندھ نے

کورونا ویکسینیشن نہ کرانے والے سرکاری ملازمین کی تنخواہیں بند کرنے کی ہدایت دے دی۔وزیراعلیٰ مراد علی شاہ کی زیر صدارت کورونا ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا جس میں صوبے بھر میں کورونا کی صورتحال پر غور کیا گیا اور صوبے میںویکسینیشن کے اعداد و شمار کا بھی جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ کورونا ویکسین نہ لگوانے والے سرکاری ملازمین کی تنخواہیں بند کی جائیں۔وزیراعلیٰ سندھ نے وزارت خزانہ کو ہدایت دی ہے کہ ویکسین نہ لگوانے والے ملازمین کی تنخواہیں جولائی سے بند کی جائیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *