کراچی سے اسلام آباد آنے والی ایئر بلیو کی پرواز میں لڑکا لڑکی سرعام شروع ہوگے ائیر ہوسٹس نے روکنے کے بجائے کمبل لادیا

اسلام آباد (این این ایس نیوز)نجی ایئر لائن ” ایئر بلیو“ کی فلائیٹ کے دوران نوجوان جوڑے نے سرعام بوس و کنار شروع کر دیا جسے جہازکا عملہ روکنے میں ناکام رہا اور جہاز میں بے چینی پھیلی رہی ۔

ایکسپریس ٹریبیون کی رپورٹ کے مطابق جوڑے کی جانب سے بوس و کنار کا واقعہ کراچی سے اسلا م آباد آنے والی فلائٹ ” پی اے 200“ میں 20 مئی کو پیش آیا جس کی تفصیلات اب عوامی سطح پر آ گئی ہیں ۔عینی شاہدین کا کہناہے کہ یہ جوڑا چوتھی لائن میں پہلے نمبر پر بیٹھا ہوا تھا جس نے دوران سفر بوس و کنار شروع کر دیا ، ساتھی مسافروں نے اس کی عملے سے شکایت کی جس پر ایئر ہوسٹس نے دونوں کو اس کام سے باز رہنے کی درخواست کی لیکن جوڑے نے ایئر ہوسٹس کی درخواست پر کان نہ دھرے ، ایئر ہوسٹس کو جب کچھ سمجھ نہ آیا کہ وہ انہیں کس طرح روکے تو اس نے جوڑے کو کمبل لا کر دے دیئے تاکہ وہ اپنے اس عمل کو کھلم کھلا کرنے کی بجائے کمبل کے اندر رہتے ہوئے کرتے رہیں ۔مسافروں کا کہناتھا کہ جب جوڑے کو شرمنا ک حرکات بند کرنے کا کہا گیا تو انہوں نے جواب دیا کہ ” آپ ہمیں کچھ بھی بتانے والے کون ہوتے ہیں ۔“ایڈووکیٹ بلال فاروق علوی بھی اسی جہاز میں سفر کر رہے تھے اور انہوں نے سول ایوی ایشن کو اپنی شکایت درج کروا دی ہے جس میں انہوں نے یہ بھی کہا کہ ایئر لائن کے عملے کی جانب سے جوڑے کو روکنے کیلئے کوئی ٹھوس قدم نہیں اٹھایا گیا ۔سول ایوی ایشن کی جانب سے معاملے کی تحقیقات شروع کر دی گئیں ہیں ، فاروق علوی نے اس حوالے سے سوشل میڈیا پر ویڈیو پیغام بھی جاری کیا ہے

Comments are closed.