سورج خانہ کعبہ کے اوپر سے کب گزرے گا تاریخ جانیں اور اس دن سے یہ خاص عمل کرنے سےہر خوائش پوری

عارف والا(این این ایس نیوز) قبلہ رخ کا تعین کرنے کیلئے سور ج -28مئی کو بیت اللہ کے اوپر سے گزرے گا پاکستانی وقت کے مطابق2 بجکر18 منٹ پر سورج خانہ کعبہ کے عین اوپر ہوگا اس وقت دنیا بھر کے سایوں کا رخ بیت اللہ کی جانب ہوگا جبکہ اس روز بیت اللہ کا سایہ نہیں ہوگا قبلہ رخ کا درست تعین کیا جاسکے گا -28مئی کو اس وقت زمین پر ایک چھڑی عموداََ گاڑھ

دیں یا کسی عمارت کے کونے کا انتخاب کریں جیسے ہی یہ وقت آئے گا اس سایہ پر ایک خط کھینچ دیں اور اس خط پر عمودگرائیں شامل سے جنوب کی جانب زاویہ قائمہ بنائیں یہی قبلہ رخ ہوگا اس وقت دنیا بھر کے سایوں کا رخ بیت اللہ کی جانب ہوگا دوبارہ سورج -16جولائی کو بیت اللہ کے اوپر سے گزرے گا اس روز بھی قبلہ رخ کا تعین کیا جاسکتا ہے ۔

جو شخص اٹھتے بیٹھتے چلتے پھرے یہ وظیفہ پڑھے رب کعبہ کی قسم وہ کبھی پریشان نہیں ہوگا کروڑوں لوگوں کا مطالبہسب سے بڑا وظیفہ استغفار ہے جس نے استغفار کو اپنا اوڑھنا بچھونا بنا لیا اس کی ساری مشکلات اس استغفار کی برکت سے حل ہوجاتی ہیں ایک آدمی حضرت حسن ؓ کے پاس آئے اور انہیں کہا گیا کہ ہمارے علاقے میں قحط پڑگیا ہے بارشیں نہیں ہورہیں پانی نہیں ہے فرمایا استغفار پڑھو ایک اور آدمی تھوڑی دیر گزری اس نے آکر کہا کہ میرے مال میں برکت ہی نہیں ہوتی نقصان ہی نقصان ہے انہوں نے کہا استغفار کرو تھوڑی دیر کے بعد ایک اور بندہ آیا

اس نے کہا کہ اس نے کہا مجھے کوئی وظیفہ بتائیں میری شادی ہے جوان بیوی میں جوان اولاد نہیں ہوتی ۔فرمایا استغفار پڑھو دو نوں میاں بیوی استغفار پڑھا کرو وہ جب چلے گئے تو انکے ساتھی نے عرض کیا حضرت حسن ؓ آپ نے آج کمال کردیا ہے کہ جو بندہ آتا ہے سب کو کہتے ہیں کہ استغفار کریں اور کوئی وظیفہ ہی نہیں پورے قرآن میں تو پھر حضرت حسن ؓ نے فرمایا یہ میں نے نہیں کہا اللہ کا قرآن میں فرمایا اپنے اللہ سے مانگو وہ بہت بڑا بخشنے والا ہے اور اللہ نے فرمایا اللہ تعالیٰ تمہارے مال بھی بڑھا دیں گے اوراولادیں بھی بڑھا دیں گے ۔

اللہ تیرے لیے با غ بھی بڑھا دیں گے اور نہریں پانی کی بھی جاری کردیں گے یہ تو قرآن میں اللہ نے خود فرمایا ہے میں نے تو وظیفہ نہیں بتایا تو استغفار ایسی نعمت ہے جس کیوجہ سے سب کچھ مل جاتا ہے رزق میں کمی ہے تو پھر استغفار ہے پر بات یہ ہے کہ سچے دل اخلاص کے ساتھ اللہ کے دروازے پر توبہ کریں ۔ جیسے اللہ نے آپ کو مکہ مکرمہ نصیب کیا ہے مردہیں یا عورتیں دو رکوٰ ۃ اسی نیت سے کہ توبہ کرلیں۔ تاکہ آدمی حج پر جائے تو پاک صاف ہوکے جائے ۔ جب توبہ کرلی تو اللہ معاف فرما دیتے ہیں دوسرا یہ بھی دعا کریں کہ یا اللہ اس دور پر فتن میں ہر طرف فتنہ ہے آپ نے اپنا گھر دکھا یا ہے تو اپنی رحمت سے وہی سہی عقیدہ نصیب فرما دے جو محمد مصطفیﷺ لیکر آئے ۔ہم تیرے عاجز بندے ہیں ۔یا اللہ جیسے اپنی رحمت سے مکام ابراہیم دکھا دیا ہے ہم ملت ابراہیم پر ہیں ہم اُمت محمدیﷺ ہیں یہی صفاء کی پہاڑی ہے جہاں سے اللہ کے نبی نے توحید کی دعوت دی ہے ہمیں بھی سہی عقیدہ نصیب فرما اور ہمیں غلط عقیدوں سے بدعت سے محفوظ فرما

Comments are closed.