بھارتی جیل کے باہر اگے پودے کھانے پر حکام نے گدھوں کو ہی جیل میں بند کردیاکتنے لاکھ کے پودے کھا گے اور کتنے لاکھ میں گدھوں کی ضمانت ہوئی حیرت انگیز تفصیلات جانیں

این این ایس نیوز! ایک جیل کے باہر اگے قیمتی پھولوں کے پودے کھانے پر حکام نے گدھوں کو ہی جیل میں بند کردیا ۔4 دن قید رہنے کے بعد آخر کار گدھوں کو ضمانت پر رہائی مل گئی ہے۔ان ”شرپسند “گدھوں کو  شمالی بھارت کی ریاست اترپردیش کے جلان ضلع کی جیل کے گرد اُگے ہوئے لاکھوں روپے مالیت کے پھولوں کے پودے کھانے پر پابند سلاسل کیا گیا تھا۔ گدھوں پرالزام تھا کہ انہوں نے 5 لاکھ بھارتی روپے مالیت کے پودے کھائے ہیں۔

جیلر آر کے مشرا نے بھارتی میڈیا کو بتایا کہ ان گدھوں  نے جیل میں لگے لاکھوں روپے مالیت کےقیمتی پودے برباد کیے ہیں، جنہیں سابقہ افسران نے جیل میں اگایا تھا۔حکام کا کہنا ہے کہ انہوں نے گدھوں کے مالک خبردار کیا تھا کہ گدھوں کو جیل کےپاس کھلا نہ چھوڑے۔ گدھوں کو قید کرنے  کے بعد حکام نے اُن کے مالک ، کیلاش، کو ان کے بارے میں بالکل نہیں بتایا تھا۔کیلاش کئی گھنٹوں تک دیوانہ وار اپنے گدھوں کو تلاش کرتا رہا ، جس کے بعد کسی نے اسے خبر دی کہ اس کے گدھوں کو جیل ہوگئی ہے۔ جیل کیلاش اپنے گدھوں کی رہائی کے لیےجیل حکام کے پاس پہنچا تو حکام نے گدھوں کو رہائی دینے سے انکار کر دیا۔ جب یہ معاملہ مقامی سیاست دان شکتی گاؤئی کے علم میں آیا تو انہوں نے کیلاش کے ساتھ جا کر اس کے گدھوں کو اُس ”قید“ سے آزاد کرا دیا،جہاں وہ آرام سے  کام کیے بغیر زندگی کے دن گزار رہے تھے۔جیلر نے ٹائمز آف انڈیا کو بتایا کہ اُن کے پاس گدھوں کو گرفتار کرنے کے اختیار تو نہیں لیکن گدھوں کے مالک کو سبق سکھانے کے لیےانہیں  روکا ہوا تھا۔جیلر نے کیلاش سے گدھوں کو کھلا نہ چھوڑنے کی  تحریری ضمانت لینے کے بعد گدھوں کو چھوڑ دیا ہے۔ جیل حکام نے یہ دعویٰ بھی کیا کہ ان گدھوں کی وجہ سے علاقے میں روڈ پر کئی حادثے بھی ہو چکے ہیں۔

Comments are closed.