صرف چند دن رہ گےاگر آپ کے پیٹ پر چربی ہے تو رمضان کے آخری عشرے میں یہ کام کرلیں انشااللہ موٹاپا ایسے ختم جیسےکبھی تھا ہی نہیں عید پر خوشی خوشی سب سے گلے ملیں

این این ایس نیوز! ماہ رمضان کے روزہ ہمارے صحت پر بہتر اثر ڈالتے ہیں ، لیکن کچھ لوگ ایسے بھی ہیں جن کے وزن میں اضافہ ہو جاتا ہے اور ان کی توند نکل آتی ہے تو اگر آپ توند اور بڑھتے وزن سے نجات چاہئتے ہیں تو کریں یہ کام اگر آپ سحری اور افطار میں تھوڑی اقلمندی سے کام لیں گے تو نہ آپ کے وزن میں اضافہ ہوگا اور نہ ہی آپ کی توند نکلےگی۔ اس کا طریقہ کار کچھ اس طرح ہوسکتا ہے۔

سحری میں یہ کھائیں
ماہرین کے مطابق جو اور اناج کی روٹی کو سحری کا حصہ لازمی بنانا چاہئے تاکہ پیٹ دیر تک بھرا رہ سکے اور ساتھا ہی پروٹینز اور کاربوہائیڈریٹس جیسے انڈے، آلو، دہی، دالیں، گوشت وغیرہ استعمال کرنا چاہئے وہیں دوستری جانب یا کافی کے استعمال سے گریز کرنا چاہئے کیونکہ یہ گرم مشروبات ڈی ہائیڈریشن اور جسم میں پانی کی کمی کا باعث بن سکتے ہیں جو اس گرم موسم میں نقصان بھی پہنچا سکتا ہے۔

متوازن افطار
افطار کے وقت وزن میں کمی کے خواہشمند لوگوں کو چاہئے کہ وہ زیادہ سے زیادہ پانی پیئیں اس سے پورے دن میں ہوئی تمام کمیاں پوری ہو جاتی ہیں اور ہاں آپ کو چاہئے کہ زیادہ کیلوریز اور تلی ہوئی غذاﺅں کو اجناس، پھلوں ، سبزیوں اور چربی سے پاک گوشت سے بدل دیں۔ اور اگر پھر بھی آپ ایسا نہیں کر پا رہے ہیں تو زیادہ کھانہ کھنے سے گریز کریں کیوں کہ یہ نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے ۔ ماہرین کے مطابق دن بھر کے فاقے کے بعد میٹابولزم کی رفتار کم ہوچکی ہوتی ہے اور اس وقت زیادہ کھانے کی صورت میں کیلوریز کو ہضم کرنا مشکل ہوتا ہے۔

ورزش سے گریز نہ کریں
دنیا بھر میں لوگ جسمانی وزن میں کمی کے لیے 16 سے 20 گھنٹے کے فاقے کو اپناتے ہیں اور اس کے دوران 4 سے 6 گھنٹے کے وقفے میں کم مقدار میں غذاﺅں کا استعمال کرتے ہیں اور ایسا ہی کچھ رمضان میں بھی ہوتا ہے۔ تو رمضان کے دوران ورزش کو جاری رکھنے سے کیلوریز کی کمی کو فائدے کی صورت میں استعمال کیا جاسکتا ہے۔ ایسا کرنے سے جسمانی چربی کی سطح میں نمایاں کمی آسکتی ہے یا یوں کہہ لیں توند سے نجات کافی آسان ہوجاتی ہے۔

Comments are closed.