افطار میں کھجور کھانے والے رسول پاک ﷺ کا یہ فرمان لازمی سن لیں

راولپنڈی (این این ایس نیوز) محمدی مسجد لالکڑتی میں میں افطاری کی اہمیت پر درس دیتے ہوئے معروف مذہبی سکلار علامہ پیر سید اظہار بخاری نے کہا ہے کہ سحری اور افطاری کر نا سنت رسول ؐہے۔ روزے دار کے منہ کی بدبو بھی خدا کو دنیا کی ہر خوشبو سے زیادہ پسند ہے ۔ روزے دار کو افطاری دینا نہیں ،بلکہ غریب روزے دار کے ساتھ بیٹھ کر افطاری کر نا ،روزے کی اصل روح ہوتی ہیروزہ کجھور سے افطارکر نا سنت رسول ؐ ہے ۔حضور نبی کریمؐ کو کھجور بہت زیادہ پسند تھی اور اس کا بہت استعمال فرماتے تھے۔

رسولؐ کا ارشاد ہے کہ جو شخص روزانہ صبح کے وقت سات عجوہ کھجوریں کھا لیا کرے اسے اس دن زہر اور جادو سے کوئی نقصان نہیں ‌پہنچا سکتا۔ایک اور جگہ ارشاد ہے عجوہ جنت کا پھل ہے۔ اس میں زہر سے شفا دینے کی تاثیر ہے۔ خداافطاری کے وقت مانگی جانے والی ہردعا قبول کرتا ہے ۔افطاری کرتے وقت ہمیں یہ بات بھی ذہن نشین رکھنی چاہیے ، کہ دنیا میں کتنے ہی لوگ ہونگے ، جنہیں افطاری کا لقمہ تک نصیب نہیں ہو تا ۔ ہمیں یہ وقت اس بھوکے اور پیا سے شخص کی یاد دلا تا ہے ،کہہ میں بھی روزہ افطار کرتے وقت ان بھائیوں کو بھی یاد رکھیں ۔ حضرت علیؓ نے افطاری کے وقت اپنی روٹی سائل کو دے دی ، اور خود روزہ نمک سے افطار کیا ۔اظہار بخاری نے کہارمضان المبارک تربیت و سیرت کا مہینہ ہے ۔کردار میں تبدیلی نہ آئے ، تو صرف بھوکا پیاسا رہنا کا کوئی فائدہ نہیں ۔روزے میں انسان کو صبر و استقامت کا موقع ملتا ہے ۔قلب و ذہن پر پاکیزگی کا آفتاب طلوع نہ ہو، تو پھر صرف جسم پروری کا دروازہ کھلتا ہے ۔جس میں روحانیت کی کوئی لمک نہیں ہوتی ، صرف روزہ خود افطار کر نا کمال نہیں ، بلکہ بھائی کو روزہ افطار کر وانا جنت کا سبب بنتا ہے ۔آ ج امت مسلمہ کو جن سنگین مسائل کا سامنا ہے ،اس کی سب سے بڑی وجہ یہ ہے ، کہ ہمارے دل اور دماغ کی سوچ خلوص سے خالی ہے ۔بھوکا نفس خدا کی یاد میں مست رہتا ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *