12 سال کی عمر میں میری شادی ہوئی اور ایک رات جب میں ۔۔۔حیرت زدہ کرنے والے انکشافات“

کوالالمپور(این این ایس نیوز) ملائیشیاءکا شمار ان ممالک میں ہوتا ہے جہاں کم عمری کی شادیاں اب بھی عام چیز ہیں۔ اب وہاں سے ایک کم عمر لڑکی کی شادی اور ماں بننے کے متعلق ایسی خبر آ گئی ہے کہ سن کر یقین کرنا مشکل ہو جائے۔ ڈیلی سٹار کے مطابق اس میری نامی لڑکی کا تعلق ملائیشیاءکے علاقے سترویک میں رہنے والے پینان قبیلے سے ہے

جس کی 12سال کی عمر میں ہی شادی کر دی گئی۔ ایک سال بعد جب وہ ماں بننے لگی تو اسے معلوم ہی نہیں تھا کہ وہ بچے کو جنم دینے والی ہے۔ اسے لگا کہ اسے ٹوائلٹ کی ضرورت محسوس ہو رہی ہے جس پر وہ ٹوائلٹ گئی اور وہیں بچے کو جنم دے دیا۔رپورٹ کے مطابق16سالہ پیٹر نامی نوجوان میری کے گاﺅں گیا تھا اور وہاں اسے میری کو دیکھتے ہی اس سے محبت ہو گئی۔ اس کے بعد دونوں 5ماہ تک ایک دوسرے سے ملتے رہے اور پھر پیٹر نے میری کو شادی کی پیشکش کر دی لیکن میری نے انکار کر دیا کیونکہوہ آگے پڑھنا چاہتی تھی اور ٹیچر بننا چاہتی تھی لیکن پیٹر کے اصرار پر اس نے شادی کر لی۔ میری کا کہنا تھا کہ ”میں آگے پڑھنا چاہتی تھی، میں نے جب پیٹر سے یہ کہا تو وہ غصے میں آ گیااور اس نے کہا کہ ہمارے ماں باپ ہمارے بارے میں جانتے ہیں چنانچہ ہمیں اب شادی کر لینی چاہیے۔ اس پر میں شادی کے لیے رضامند ہو گئی

Comments are closed.